جڑانوالہ واقعہ قابل مذمت ہے، ہمارا دین اس کی اجازت نہیں دیتا :حافظ نعیم الرحمان

کراچی : امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمان کاکہنا ہے کہ جڑانوالہ میں جو واقعہ ہوا وہ شرمناک اور قابل مذمت ہے، ہمارا دین اس کی اجازت نہیں دیتا، مکمل تحقیقات ہونی چاہئیے ۔کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ پاکستان میں بہت سے مسائل ایک ساتھ چل رہے ہیں، پاکستان کی پوری عوام اس نظام کو چلانے والوں کے ہاتھوں یرغمال بن گئے ہیں، اس ملک کے حکمران عوام کے بارے میں سوچتے نہیں اور فیصلے کرتے ہیں۔
حافظ نعیم الرحمان کاکہنا تھا کہ آئی ایم ایف کی شرائط مکمل کرکے ملک میں مہنگائی کردی جاتی ہے جو غلامی کی نشانی ہے، آئی ایم ایف حکمرانوں کو عیاشیوں کی اجازت نہیں دیتا یہ انکی اپنی غلطی ہے ، ملک میں ٹیکس کا نظام ہے جس کے تحت عوام کو پابند کیا جاتا ہے، معیشت کی بدحالی کو صحیح کرنا عوام کے ساتھ ساتھ حکمرانوں کی بھی ذمہ داری ہے۔
انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کو چاہیے کہ اپنے اخراجات کم کرکے عوام کے لیے آسانی پیدا کی جائے، نگراں حکومت کے آتے ہی عوام پر پٹرول بم گرادیا گیا، نگراں وزیراعظم سے درخواست ہے حکمرانوں کے اخراجات کو کم کرکے عوام کو سہولت دیں، جو ٹیکس عوام پر لگایا جاتا ہے اس سے عوام پس رہی ہے، مایوسی بڑھ رہی ہے، مہنگائی کی وجہ سے عوام ملک چھوڑ کر جانا چاہتے ہیں۔
امیر جماعت اسلامی نے کہاکہ جماعت اسلامی کل مہنگائی کے خلاف ملک گیر احتجاج کرے گی، ہم احتجاج پرامن کرنا چاہتے ہیں تاکہ عوام کا غصہ باہر نہ آئے۔انہوں نے شہر میں بڑھتے جرائم پر بات کرتے ہوئے کہا کہ کل پھر سٹریت کرمنلز نے ایک نوجوان کی جان لےلی، سٹریٹ کرمنلز کے حوالے سے جب سوال کیا جائے تو وزیر اعلیٰ سوال ہوا میں اڑا دیتے ہیں۔
حافظ نعیم الرحمان کاکہنا تھا کہ رانی پور میں ہونے والا حادثہ افسوس ناک ہے، حادثے کو دبانے کی کوشش کی گئی مگر سوشل میڈیا کے ذریعے ایسا ہو نہیں سکا، جڑانوالہ میں بھی جو واقعہ ہوا وہ بھی قابل مذمت ہے، امریکہ اور بھارت میں ایسے واقعات ہوتے ہیں مگر بین الاقوامی سطح پر آواز نہیں اٹھتی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں